خصوصی دعاؤں مین یاد رکھیں – عالم خان




موجودہ حالات کے پیش نظر مندرجہ ذیل لوگوں کو اپنی خصوصی دُعاؤں میں ضرور یاد رکھیں۔
۱- ان ڈاکٹرز کو جو مریض کو دوائی لکھتے وقت ووٹ عمران خان کو دو لکھ دیتے تھے ۔
۲- ان مسافروں کو جو پوری دن مزدوری کے بعد رات کو سرخ اور سبز دوپٹّے گلے میں ڈال کر فیس بک پر لائیو آتے تھے اور تبدیلی تبدیلی کے نعرے لگاتے تھے۔
۳- ان اساتذہ کو جو عمران خان کی پرائیوٹ یونیورسٹی کو بطور مثال پیش کرکے کلاسوں میں لیکچر دیتے تھے کہ تبدیلی آتے ہی ملک میں تعلیمی ایمرجنسی نافذ کی جائیگی۔
٤- ان غریبوں کو جو قرض لیتے تھے اور اسلام آباد ڈی چوک میں جب آئے گا عمران خان پر دن رات ناچتے تھے ۔
٥- ان نوجوان کو جو اچھل اچھل کر کہتے تھے کہ خان صاحب کسی کو بھی نہیں چھوڑے گا اور احتساب احتساب کے نعرے لگاتے تھے ۔
٦- ان ڈرائیورز کو جو ہر وقت ہائی والیوم سے عطاء اللہ عیسی خیلوی اور ابرار الحق کے تبدیلی کے گانے لگا کر گھومتے تھے ۔
۷-ان بصیرت سے خالی اہل علم اور اصحاب جبہ و عمامہ کو جو عمران کی ریاست مدینہ کی تسبیح کرتے نہیں تھکتے تھے ۔
٨- ان دانشوروں کو جو گورنر ہاؤس اور وزیراعظم ہاؤس کے یونیورسٹی اور لائبریری بننے کا خواب دیکھ رہے تھے ۔
۹- ان صحافیوں کو جو مندرجہ بالا تمام طبقوں کو گمراہ کرنے میں پیش پیش تھے، جن کے ٹاک شوز اور کالم تبدیلی، سونامی اور نیا پاکستان کے بغیر ادھورے ہوا کرتے تھے ۔

اپنا تبصرہ بھیجیں