پیاری باجی – بنت شیروانی




دل بہت غمگین ، اُداس ہورہا تھا ……..! عجیب سی کیفیت تھی جب سے صائمہ سالم باجی کے انتقال کی خبر پڑھی۔ دل تو اس وقت بھی غمگین ہوا تھا ، پریشان ہوا تھا . جب اُنکی کینسر جیسے موزی مرض میں مبتلا ہونے کی خبر ملی تھی ۔ اور اُن کے اسی مرض میں مبتلا ہوۓ اُن کے بیٹے کی پیدائش کی خبر نے خوشی بھی دی تھی ۔

اور صائمہ باجی کے آئی سی یو میں داخلے کی خبر سے انتقال کی خبر اور اس وقت تک نہ جانے کتنی بار ان کا چہرہ نظروں کے سامنے سے گزرا ۔ طریقہ سے دوپٹہ اوڑھے اور اچھے اخلاق سے ملتی اچھی باجی ۔ مرکز قرآن و سنہ میں سورۂ فاتحہ کی تفسیر سمجھاتی ، الرحمان اور الرحیم کے معنی و مفہوم سمجھاتی ……. یہ باجی یاد آئیں ۔ اور ان کا واٹس اپ پر سابقات جمعیت کے لۓ گروپ بنانا . جس کا ایک مقصد یہ بھی کہ بہت سی جمعیت کی طالبات جو کہ اب اجتماعیت سے منسلک نہیں یا اجتماعات میں شرکت نہیں کر پاتیں . وہ اپنے آپ کو اس تحریک کا ہی فرد سمجھیں اور اس سے اچھا سیکھنے کی کوشش کریں ۔ اور یہ گروپ بہت ہی مفید ہی ثابت ہوا۔

صائمہ باجی آپ کی جوانی کو رب کی راہ میں لگانے کے ہم گواہ ہیں ۔ ہم آپ کے زندگی کے ہمسفر ڈاکٹر سالم کی بھی آپ کا ساتھ دینے کے لۓ اُن کے بھی شکر گزار ہیں کہ اُنھوں نے آپ کو اجازت دی اپنے رب کی راہ میں آپ کا وقت و صلاحیتیں لگانے کی۔خدا انھیں بھی بہترین جزاۓ خیر دے۔ صائمہ باجی آپ کی تو بیماری میں مبتلا ہونے سے بھی گناہ معاف ہوگۓ ہوں گے۔آپ ہمیں بہت پیاری تھیں باجی۔ہم نے آپ کے لۓ دُعائیں بھی کیں ۔اور آپ کا وقت اس دنیا سے پورا ہوا تو آپ چلی گئیں۔

لیکن پیاری باجی آپ ہمارے دلوں میں زندہ ہیں …..! اور اس تحریک کی برکتیں کہ جنھوں نے آپ کو دیکھا بھی نہیں . وہ بھی آپ کے لۓ دُعائیں کر رہے ہیں ۔ پیاری باجی ! اللہ تعالی آپ سے راضی ہو ، آپ کی قبر کو جنت کے باغوں میں سے ایک باغ بنا ،آپ کی تمام نیکیوں کو قبول کر ،آپ کے بچوں کا بہترین وارث بن جا ۔اور باقی اہل خانہ کو بھی صبر دے۔

اپنا تبصرہ بھیجیں