وہ اپنے ساتھ اپنی مسیحائی لے گیا – صالحہ نور




وہ بچہ اپنی ماں کے ساتھ میرے کلینک پر آیا ……. جس کی بیماری اس کی عمر سے کئی گنا زیادہ تھی . درد سے بلکتے بچے کی ایک ہی رٹ تھی کہ مجھے انسولین لگا دو …..
ماں کے پاس بچہ کی تکلیف کا کوئی علاج نہیں تھا کہ اگر انسولین خرید لی تو کھائیں گے کہاں سے ؟؟؟؟
” اس دن کے بعد میں نے پختہ ارادہ کرلیا کہ آئندہ بغیر فیس کے علاج کرونگا . ”
یہ الفاظ اس مصری ڈاکٹر کے ہیں …… جو اپنی غریب پروری کی وجہ سے مشہور ہوئے.
ڈاکٹر محمد مشالی ، گذشتہ 50 سال سے مریضوں کا مفت علاج کرتے رہے . صاحب استطاعت مریضوں کے لئے ان کی فیس انتہائی معمولی (1 ڈالر سے بھی کم ) تھی . ڈونیشنز ہمیشہ یہ کہہ کر مسترد کی کہ مجھے اس کی ضرورت نہیں ……. یہ پیسے بے گھر یتیم بچوں اور ہسپتالوں کی بہبود کے لئے خرچ کیا جائے . متحدہ عرب امارات کے کسی تاجر نے گاڑی اور اچھی خاصی رقم ہدیہ کی . کچھ عرصہ بعد معلوم ہوا کہ ڈاکٹر مشالی نے رقم غریبوں میں تقسیم جبکہ گاڑی بیچ کر طبی آلات خرید لئے….. !
میڈیکل کی فیلڈ کو پیسہ کمانے کی مشین بنانے والوں کو ایک مختلف اور روشن راہ دکھانے والے ڈاکٹر مشالی ، کل اس دار فانی سے کوچ کرگئے . انا للہ وانا الیہ راجعون ……..
پروردگار دنیا میں ناداروں کے لئے آسانیاں پیدا کرنے والے کی قبر کی منزلیں آسان کرے…..! آمین

اپنا تبصرہ بھیجیں