ریاست اس دہشت گردی کو سمجھ لے – زبیر منصوری




وہی پرانا طریقہ واردات …… ! پہلے آزادی دو ماحول بنانے دو کہ جو جہاں چاہے جو بک دے . اسے کوئی کسی کا ڈر خطرہ نہ ہو . اسے پتہ ہو کہ مجھے سوئی ہوئی ریاست اور اوپر بیٹھے زلفی بخاری صاف بچا لے جائیں گے . پھر اس آزادی سے فائدہ اٹھا کر وہ سرعام سڑک پر کھڑا ہوکر لاوڈ اسپیکر پر ٹی وی چینلز پر صحابہ کرام پر اپنی زبان دراز کرے بکواس کرے اور یہ مسئلہ ساری دنیا کے سامنے آجائے.
اس پر غیرت مند مسلمانوں کا رد عمل آئے تو ریاست ہڑ بڑا کر اٹھے اور جلدی سے کاسمیٹکس کام شروع کر دے ……. لائسنس معطل ….. ہلکی سی قانونی سقم چھوڑتی ایف آئی آر درج ……. ! یہ کریں گے وہ کریں گے . غصہ ٹھنڈا ، رات گئی بات گئی ! اور نئے گستاخوں کو نیا حوصلہ دے گئی کہ کچھ نہیں ہوتا الٹا آدمی اپنوں میں ہیرو بنتا ہے . لندن میں پناہ پاتا ہے اور قانون کی اوقات کچھ بھی نہیں کاغذ کا ٹکڑا بس . نہیں ……! غیرت مند مسلمانوں اب کی بار ایسا ہونے نہ دو . اللہ رسول دین امت صحابہ اور مقدس ہستیوں کے ساتھ کھڑے ہو جاؤ اور منواؤ. کہ
1)ان سب کے خلاف گستاخی دہشت گردی قرار دی جائ ے گی کیونکہ یہ اگر کنٹرول نہ ہوئی اور ریاست لسی پی کر سوتی رہی اور بیرونی قوتوں کے لئے پاکستان کی سرزمین “پرا کسی وار” کی جگہ بنی رہی تو کچھ قوتوں کے لئے یہ سب اور بڑے فنڈز کھانے کا ذریعہ بن جائے گا اور عام مسلمان مرے گا . چاہے وہ سنی ہو یا شیعہ کیونکہ مارنے والا کوئی مہر چیک نہیں کرتا۔
2) حکومت بعد میں نہیں پہلے حرکت مین آئے گی محرم ہی نہیں ہر طرح کے مذہبی جلوسوں کو حدود و چار دیواری اور اصولوں کا پابند کر دیا جائے گا .
3)ایسے جرائم پر اسپیڈی ٹرائل کرکے جلد سزا دی جائے گی.
4)تفتیشی افسر اسی گروہ کا نہیں ہو گا.
5)معزز شہریوں کی ایک کمیٹی اس پر نظر رکھے گی اور انصاف کا ڈرامہ نہیں ہو گا وہ ہوتا ہوا نظر آئے گا.
6)بیرونی فنڈنگ نظر آئی تو یہ بھی دہشت گردی سمجھی جائے گی.
7) اور برسوں نہیں دنوں میں فیصلہ ہوتے ہی ایسے جرائم پر سزا سرعام دی جائے گی.
8)یہ کرکے پھر دو چار کو سزا ہوتی دکھا بھی دی جائے انشااللہ سارے کھاتے بند ہو جائیں گے.
ریاست جلد سمجھ لیں ……. اگر سنجیدہ فوری اور طاقتور اقدامات نہ کئے گئے تو آپ دہشتگردی کے خلاف جنگ کے نقصانات بھول جائین گے یہ اتنا بڑا مسئلہ ہے ……..!

اپنا تبصرہ بھیجیں