رب ناراض ہے لوگو ! – افشاں نوید




وہ اعتکاف میں ہیں آج کل ۔ان کا وائس میسج آیا, بہت دلگداز, ہر لفظ غم میں ڈوبا ہوا۔ کہہ رہی تھی کہ رمضان بھر میں نے حرم کی ویڈیوز دیکھیں,جہاں لاکھوں لوگ ہوتے تھے وہاں چند درجن لوگ۔ جب باپ بیٹے سے سخت ناراض ہوتا ہے, انتہائی غضب ناک دھمکی دے کر کہتا ہے کہ میں تجھے گھر سے نکال دوں گا!!
مگر ایسا کب ہوتا ہے کہ باپ بیٹے کو گھر سے نکالے۔بس غصہ کا اظہار ہوتا ہے۔تنبیہ ہوتی ہے۔ خالی مسجد حرام ,خالی مسجدنبویﷺاللہ نے اپنے گھر سے نکال دیا ہے۔ جن کو نکالا گیا ہے وہ اس کرب کو اس درجہ محسوس بھی نہیں کر رہے۔۔۔ یہ کہہ کر وہ روتی چلی گئیں کہ کاش اس بیٹے کی طرح جس کو گھر سے نکالا گیا اگر وہ خود کفیل نہ ہو تو سارے خاندان کی ہمدردیاں اس کے ساتھ ہوتی ہیں۔ سب باپ کو منانے کی سعی میں لگ جاتے ہیں۔ کس طرح دربدر ہو جاتا ہے نافرمان ……. افسوس کے ہم سے کوئی ہمدردی کرنے والا بھی نہیں۔ ہم اس کے گھر سے نکال دیئے گئے ہیں۔ مسجدوں کے تو دروازوں پر لکھا ہوتا ہے……اللھم افتح لی ابواب رحمتک۔اے اللہ رحمتوں کے در کھول دے۔عشرہ رحمت گزر گیا,مغفرت گزر گیا۔ ہم لاک ڈاؤن کے نقصانات,بازار کی ایس او پیز,تاجروں کے مطالبات پورے رمضان میڈیا پر کیا زیر بحث رہا۔علماء سے رقت آمیز دعائیں کراکے ہم نے فرض کفایہ اتار دیا۔
درماندہ بیٹے کی تو پیشانی پر دکھ لکھا ہوتا ہے ۔وہ بھلا سوتا ہوگا رات کو؟کیا کیفیت ہوتی ھوگی اس کے دل کی۔ نرم بستر,ماں کے ہاتھوں کا لمس۔۔۔وہ شب بھر کروٹیں بدلتا ہوگا۔۔کتنا نادم ہوتا ھوگا اپنےکیے پر۔ ہمارے دسترخوان متاثر ہوئے نہ روزوشب کے معمولات۔ مسجدیں خالی پڑی ہیں اس سے بڑا کوئی غم ہوسکتا ہے۔ معتکفین مسجدوں تک نہ جاسکے۔تراویح کی رونقیں خاموش ہوگئیں۔ قوم اس بات کے لئے تو پریشان ہے کہ دکانیں کھلیں اور بازار۔ اللہ تو لطیفٌ خبیر ہے وہ دلوں کے حال جانتا ہے,وہ ہمارے دلوں کو دیکھ رہا ہے کہ ہم کتنا پریشان اس بات کے لئے کہ مالی خسارہ کم ہو۔ جو خسارہ نظر آرہا ہے,محسوس ہورہا ہے اس پر ہماری تڑپ کتنی ہے جو عظیم خسارہ ہے خانۀ خدا کی ویرانی۔۔۔ اس کے لیے کتنی آنکھیں نم ہیں,کتنے سر سجدے میں ہیں۔اگر آسمان پر دعا کے دروازے بند ہوگئے تو کیا فائدہ ایسی تجارت اور ایسے بازار کا۔۔۔ سسکیوں کے دوران انکا وائس میسیج ختم ہوگیا۔ پھر ٹیکسٹ موصول ہوا۔
میری بات پہنچا دوگی ناں۔۔۔یہ آن لائن عید کی خریداریوں کا وقت نہیں ہے۔۔۔عید وعید نہ بن جائے۔۔۔رب ناراض ہے نکال دیا گھر سے۔۔دروازے بند کرلیے۔ کہو کہ چلو اس چوکھٹ پر سر رکھتے ہیں جو جلد مان جاتا ہے,ماؤں سے ستر گنا زیادہ چاھتا ہے۔

اپنا تبصرہ بھیجیں