قومی اسمبلی کا اجلاس: کورونا وائرس پربحث کے لیے تحریک منظور




اسلام آباد: ڈپٹی اسپیکر قاسم خان سوری کی زیرصدارت قومی اسمبلی کا اجلاس جاری ہے جس میں  کورونا وائرس پربحث کے لیے تحریک متفقہ طورپر منظور کرلیا گیا ہے۔

اجلاس میں ایس او پیز کے مطابق اراکین کوایوان میں داخل ہونے دیاگیا۔ ملک بھر میں مختلف واقعات و حادثات میں جاں بحق افراد کے لیے فاتحہ خوانی بھی کی گئی۔

وزیرخارجہ شاہ محمود قریشی نے اظہار خیال کرتے ہوئے کہا کہ پاکستان سمیت دنیابھر میں کورونا نے تباہی مچادی ہے۔ کورونا وائرس ایک چیلنج ہے اور حکومت نے اپوزیشن کی رائے کومقدم سمجھتے ہوئے اجلاس بلایا ہے۔

ان کا کہنا تھا کہ دوسری جنگ عظیم کے بعدکوویڈ 19 بڑا بحران ہے، 209ممالک کوروناوائرس سے متاثر ہوچکے ہیں۔ وباآنے کے بعد کوئی بھی ملک فوری طور پر اس سے نہیں نمٹ سکتا۔

انہوں نے کہا کہ کوروناسے امریکہ، برطانیہ اور اٹلی جیسے ممالک میں ہزاروں افراد ہلاک ہوچکے ہیں۔ پاکستان میں کورونا وائرس کاپہلا کیس 26فروری کوتشخیص ہوا اور اس وقت ہماری ٹیسٹنگ استعداد 100تھی جو اب ہزار ہوچکی ہے اور ملک میں 70کے قریب لیبارٹریز ہیں جہاں ٹیسٹنگ کی سہولیات ہیں۔

وزیرخارجہ نے کہا تاثر دیا جا رہا ہے کہ سندھ کےساتھ ناانصافی ہو رہی ہے جب کہ این ڈی ایم اےنےسندھ کو 8 لاکھ  26ہزارسےزائد ماسک دیئے۔

شاہ محمود نے کہا کہ میرا بھٹو اور بےنظیرکی پیپلزپارٹی سے تعلق رہا ہے۔ میں اس پیپلزپارٹی کاحصہ تھاجو وفاق کی بات کرتی تھی لیکنآج کی پیپلزپارٹی ایک صوبے تک محدود ہوگئی ہے۔ انہوں نے کہا آج سندھ کارڈ کی نہیں بلکہ پاکستان کارڈ کی ضرورت ہے۔

مسلم لیگ ن کے رہنما خواجہ آصف نے حکومتی تنقید کو نشانہ بناتے ہوئے کہا کوروناکیسزمیں اضافےکےساتھ ہی احتیاطی تدابیرمیں کمی آئی۔ 100ہلاکتیں ہوئی تو اسمارٹ لاک ڈاوَن کا فیصلہ کیا گیا۔ پہلے کہا گیا مئی میں کیسزمیں اضافہ ہوگا لیکن ابھی لاک ڈاوَن ختم کرنے کا فیصلہ کیا گیا۔

خواجہ آصف نے کہا غفلت کی وجہ سے کوروناکیسزمیں اضافہ ہوا۔ ڈاکٹرظفرمرزا نے کہا 78فیصد کیسزایران سے آئے۔ تفتان میں مرغیوں کی طرح لوگوں کو بند کیا گیا۔

The post قومی اسمبلی کا اجلاس: کورونا وائرس پربحث کے لیے تحریک منظور appeared first on ہم نیوز.

اپنا تبصرہ بھیجیں