Home » اعتبار – بنتِ خاؤر
شاعری

اعتبار – بنتِ خاؤر

کسی کی باتوں کا اعتبار کر لیا ہم نے
جیتے جی خود پہ وار کر لیا ہم نے

ہم کہ بس دائروں میں سَجے رہنے والے
بے دھڑک ایک خوف اختیار کر لیا ہم نے
آنے والے بھی ہنسے جانے والے بھی روئے
خود ہی خود کو سنگسار کر لیا ہم نے
زندگی پِندار میں سجی تکتی ہی رہی

سانس لیتے ہوئے خود کو مار لیا ہم نے
غم میں روئے بھی تو ایسے کہ جگر چیر دیا
اور درد سے جبیں پہ بہت پیار لیا ہم نے
کسی کی باتوں کا اعتبار کر لیا ہم نے
جیتے جی خود پہ وار کر لیا ہم نے

Add Comment

Click here to post a comment