Home » ایک جان کشمیر اور پاکستان – مہرین الیاس
شاعری

ایک جان کشمیر اور پاکستان – مہرین الیاس

رشتہ تیرا میرا اے! میرے کشمیر
اب کوئی باطل نہ توڑ پائے گا
کر کے سازش دشمن نے ایسی
ہم کو دو حصوں میں بانٹ رکھا ہے
ستم اس پہ کہ تیرے جواں کو ناحق
روز یہ ظالم شہید کرتے ہیں
جدا ہونے پر تیرے اے میرے کشمیر
تنہا ہوں میں اس لڑائی میں
ایک ہو جائیں گر ہم دونوں 
پھر کوئی سازش جدا نہ کر پائے گی

"میرے کشمیر کے جوان تیری جرت کو سلام"
 کھو کے جزبہ آزادی میں تو نے
اپنی جوانی تک گنوائی ہے
کھا کے سینے پہ گولی تو نے
اپنی مٹی کو گواہ بنایا ہے
تو نے رتبائے شہادت پایا ہے

“میرے کشمیر تیری محبت کو سلام”
شہید ہوتا ہے جب مرد مجاہد تیرا
ارض پاک کے پرچم میں لپٹایا ہے جاتا

“میرے کشمیر کے بزرگ کی ہمت کو سلام”
پہن کر تاج شہادت کا تیری
باپ نے لحد میں اتارا تجھ کو
ہاتھوں کا سہارا تھا تو جن کا
کانپتے ہاتھوں نے دیا کاندھا ان کو
“میری کشمیر کی ماں تیری عظمت کو سلام”
دیکھ کے خون میں لختِ جگر کو اپنے
صبر کا پیمانہ لبریز نہ ہوا ماں تیرا
دعاؤں میں اثر تیری ہے اتنا
طلوع ہونے کو ہے صبح آزادی
دیکھ کے تیرے حسیں نظارے میرے کشمیر

  جنت کا  گماں سا  ہوتا  ہے
 روشنی تیری سے ہوگی 
 ارض پاک کی تکمیل
 طلوع ہونے کو ہے آزادی کا سورج
 رشتہ تیرا میرا اے! میرے کشمیر 
 اب کوئی باطل نہ توڑ پائے گا 

Add Comment

Click here to post a comment