Home » ہر منظر جنت وادی کا – اسماء صدیقہ
شاعری

ہر منظر جنت وادی کا – اسماء صدیقہ

اس گل رنگ سے اک خطے میں
کیا قبضہ ہے بربادی کا
ہاں آگ وخون کے نرغے میں
کیا جذبہ ہے فولادی سا

اس ارض ارم کے حصے میں
ہر کوچہ ہے فر یادی سا
ہر پھول لہو میں ڈوبا ہے
ہر گیت میں گویا نوحہ ہے
پر سوز یقیں کی قوت میں
اک مژدہ ہے دلشادی کا

ہر منظر جنت وادی کا
اک نغمہ ہے آزادی کا
پر بچہ بچہ وادی کا
ہے نعرہ زن آزادی کا

Add Comment

Click here to post a comment