Home » سقوط ڈھاکہ – فرح مصباح
Uncategorized

سقوط ڈھاکہ – فرح مصباح

غفلت قوم جب پروان چڑھتی ہے
تاریخ پھر کوئی داستان لکھتی ہے
کئی مرتے ہیں کئ مٹ جاتے ہیں
ظلم کی چکی میں پس جاتے ہیں

ایسا ہی ایک درد ناک واقعہ سکوت ڈھاکہ
دل شکستہ شام غم سکوت ڈھاکہ

نعروں کی تیلی سے فساد کی آگ بھڑکتی ہے
اس بھڑکتی آگ میں سب راکھ ہو جاتے ہیں
آندھی چلتی ہے جب مفادوں کی
زہر سارے فضاؤں میں بھر جاتے ہیں

ایسا ہی ایک درد ناک واقعہ سکوت ڈھاکہ
دل شکستہ شام غم سقوط ڈھاکہ

بہار جو ہوتی ہے فضا میں مانند خوئے گل
نالہء غم سے موسم خزاں میں بدل جاتے ہیں
نعرہ قومیت و لسانیت کے دلدل میں
لوگ پستی میں دھنس جاتے ہیں

ایسا ہی ایک واقعہ سکوت ڈھاکہ
دل شکستہ شام غم سکوت ڈھاکہ

وطن کو اس کج روی سے بچالے مولا
سنبھال ہمیں تفرقوں سے بچالے مولا
درد دل عطا کر خیر الناس بنا دے
ملت و قوم کو یکجا بنا دے مولا

پھر نہ کوئ ہو مثلِ واقعہ سقوط ڈھاکہ
دل شکستہ شامِ غم سقوط ڈھاکا

Add Comment

Click here to post a comment