آسٹریلیا میں سفاک اسٹریٹ کرمنل کو مثالی سزا –




برسبین : آسٹریلیا کی عدالت نے راہگیر کے چہرے پر چاقو مار کر زخمی کرنے کے مقدمے میں ملوث ملزم کو جیل بھیج دیا، جج نے ملزم کو پانچ سال اور آٹھ ماہ قید کی سزا سنا دی۔

آسٹریلیا کی ریاست کوئینز لینڈ کی عدالت نے سال 2019میں ایک شخص کو چھرا مارنے کے جرم میں 28سالہ مجرم کینن لی گورلی کو جیل بھیج دیا۔

اس پر الزام تھا کہ برسبین کے فورٹی فولیڈی ویلی میں قائم ایک اسٹور میں ملزم نے ایک خاتون سے بد تمیزی کرنے کی کوشش کی، اس دوران وہاں موجود ایک شخص نے ملزم کو مخاطب کرتے ہوئے کہا کہ تمہارے ساتھ کیا مسئلہ ہے۔

جس پر ملزم کینن لی گورلی نے فوری طور پر پلٹ کر اس کے منہ پر تھوکا اور تیز دھار چاقو سے اس پر حملہ کردیا، جس کے نتیجے میں اس اجنبی شخص کا جبڑا کٹ گیا اور سینے پر بھی گہرے زخم آئے۔

حملے کے دوران چھری اس کی آنکھ کے نچلے حصے پر بھی لگی اس کے ساتھ ہی اس کی ناک کان اور ابرو پر زخم لگے، پولیس کے مطابق اس اجنبی کے سینے پر 23 سینٹی میٹر لمبا زخم تھا۔

گزشتہ روز ملزم کینن لی گورلی کو برسبین ڈسٹرکٹ کورٹ میں پیش کیا گیا جہاں ثبوت پیش کرنے پر ملزم نے عدالت کے روبرواپنے جرم کا اعتراف کیا، عدالت کو بتایا گیا تھا کہ یہ حملہ معمولی سی تلخ کلامی پر ہونے والا تشدد تھا۔

غیر ملکی خبر رساں ادارے کے مطابق  عدالت کے جج رچرڈ جونز نے ملزم گورلی کو پانچ سال اور آٹھ ماہ قید کی سزا سنا دی، پیرول کا اعلان نہیں کیا گیا ہے کیونکہ وہ پہلے ہی 500 دن سلاخوں کے پیچھے گزار چکا ہے۔

واضح رہے کہ اس سے قبل ملزم گورلی کو سال 2016میں بھی ایک شخص پر شاٹ گن سے فائر کرنے، ہاتھ اور ران میں گولی مارنے پر قید کی سزا دی گئی تھی۔

Comments

اپنا تبصرہ بھیجیں