ذرا سوچیں تو…! – زبیر منصوری




ذرا سوچیں تو …….. ! فرانس کو امت کہاں کہاں پرسیپشن اکانومی وغیرہ کی سطح پر نقصان پہنچا سکتی ہے؟ مثلاً دارا رقم کے 1000 اسکولز چاہیں تو ہولوکاسٹ میں یہودیوں کے جھوٹ اور مبالغہ آرائی پر کارٹون بنانے کا گرینڈ مقابلہ کروا دیں یا اس پر اچھے اسٹیج ڈرامے بنوا دئیے جائیں . اس طرح بچوں کو اس تہذیبی جنگ سے جوڑنے کا موقعہ بھی مل جائے گااور آقا کے لئے شعوری وفاداری بھی پیدا ہوگی .

( مجھے یقین ہے اس کے پیچھے بھی یہودی ذہن کار فرما ہوگا)

غزالی کے سینکڑوں اسکولز میں بھی اس ٹاپک پر تقاریر کا مقابلہ کروایا جا سکتا ہے . بڑے بچوں کو انٹرنیٹ پر ریسرچ کرکےہولو کاسٹ پر مواد اکٹھا کرنے کا ٹاسک دیا جا سکتا ہے . نوجوانوں کی کوئی تنظیم اٹھے اور ٹرک مالکان سے ملک بھر میں بات کرکے انہیں ایک چھوٹا سا بینر فراہم کر دے جو وہ ٹرک کے پیچھے لگا دیں جس پر اردو اور فرینچ میں لکھا ہو کہ ” اس ٹرک میں فرانس کا مال نہیں لے جایا جاتا اس لئے کہ وہ ہمارے نبی ص کا گستاخ ہے . کچھ لوگ فرانس کے جھنڈے سڑک پر پینٹ کردیں اور کراس کر دیں اور اس کی ویڈیوز فرانسسی عوام کے پیجز پر لگائین اور لکھیں کہ آپ اگر ہمارے نبی عزت نہین کر سکتے تو آپ کی بھی کوئی عزت نہیں ……..

ڈیجیٹل میڈیا اور پرسیپشن منیجمنٹ کے ماہرین آگے آئیں اور دیکھیں کہ کیا کیا نیا اور کریئیٹو آئیڈیا کیا جا سکتا ہے . فرانس کے امیج کو دنیا بھر میں خراب کرنے کے لئے ۔ اور سوچیں ۔۔ ؟ اور سوچیں ۔۔ ؟ ممکن ہے یہ سوچیں ہی نامہ اعمال کا وزن بڑھا دیں …….!

اپنا تبصرہ بھیجیں